حوالہ جاتی کتب کی اقسام || Reference Books Types

حوالہ جاتی کتب
حوالہ جاتی کتب سے مراد ایسی کتب جن کا استعمال کتب خانے کے تک محدود ہویہ ایسی کتابیں ہوتی ہیں جو نصابی کتاب کی طرح مستقل یا مسلسل نہیں پڑھی جاتیں بلکہ ان کو ضرورت کے مطابق کسی خاص واقع یا حقیقت کو جاننے کیلیے دیکھا جاتا ہے۔
ایسی کتب جو حوالہ جاتی مواد میں کسی بھی طرح کی معلومات فراہم کریں خواہ وہ کسی بھی ہیت میں ہو یا طبع شدہ کتب و رسائل کی شکل میں ہو یا خوردبینی مواد اور سمعی و بصری مواد کی صورت میں ہو حوالہ جاتی مواد ہی کہلائے گا۔
لہذا ہم کہ سکتے ہیں کہ حوالہ جاتی کتب وہ کتابیں ہوتی ہیں جن کو کسی مخصوص لفظ، تاریخ، واعہ کی حقیقت جاننے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے مثال کے طور پر معلومات عامہ کی کتب یا لغت جسے صرف کسی لفظ کے معنی دیکھنے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔ٹیلی فون ڈائریکٹری میں صرف فون نمبر کو دیکھا جا سکتا ہے۔
اقسام
کتب خانوں میں حوالہ جاتی مواد کی چند چیدہ چیدہ کتب کی اقسام درج ذیل ہیں۔
1۔لغت:
اس میں کسی الفاظ کے معنی، مفہوم، ہجے، وغیرہ ہوتے ہیں اس میں الفاظ کو الفبائی ترتیب میں منظم کیا جاتا ہے، لغت کو حوالہ جاتی ماخذ میں بنیادی اہمیت حاصل ہوتی ہے۔
2۔انسائیکلو پیڈیا:
حوالہ جاتی کتب میں قاموس العلوم کو بھی بنیادی اہمیت حاصل ہے اس میں ہر موضوع پر مفصل معلومات مہیا ہوتی ہیں۔ریسرچر کے لیے یہ انتہائی اہم تصور ہوتا ہے اس میں کسی شہر، مشہور شخصیات، علاقوں، اشیاء، پرندوں، جانوروں وغیرہ کے متعلق معلومات ملتی ہیں۔
3۔کتابیات:
کتابیات کو کتابوں کی فہرست کہا جاتا ہے اس میں کسی ملک، علاقے، کسی ناشر وغیرہ کی تمام کتب کے متعلق معلومات میسر ہوتی ہیں۔
4۔کیٹلاگ:
حوالہ جاتی ماخذ میں کیٹلاگ کو بھی بڑی اہمیت حاصل ہوتی ہے، جب کسی کتاب یا کتب خانے کے متعلق معلومات درکار ہوں تو کیٹلاگ سے مدد لی جاتی ہے۔
5۔اشاریہ جات:
مضامین کی ایک ایسی فہرست جو مکمل کتابیاتی معلومات کے ساتھ ایک ضابطہ کے تحت مرتب کی جائے تو اسے اشاریہ کہتے ہیں۔اشاریہ ان سوالات کو حل کرنے میں مدد دیتا ہے جو کسی ماخذ کی نشاندہی کرتے ہوں، اشاریہ میں عموما صفحہ نمبر بھی درج ہوتا ہے۔
6۔سالنامے:
جدید معلومات پر مبنی ایسی کتاب جو ہر سال شائع ہو اس قسم کی کتب میں عموما سائنسی، اقتصادی، اور شماریاتی ادارے شائع کرتے ہیں جن میں ان کی سالانہ رپورٹ درج ہوتی ہے۔
7۔المانکس:
ان کو جنتریاں یا تقاویم بھی کہا جاتاہے جن میں ایک سال میں واقع ہونے والے تمام اہم تہواروں کی فہرست ہوتی ہیاس میں ستاروں کے علوم، کھیلوں کے اہم ایونٹ وغیرہ کے متعلق معلومات درج ہوتی ہیں۔
8۔ضمیمہ جات:
ضمیمہ جات سے مراد مختلف حوالہ جاتی کتب اپنے ضمیمہ جاری کرتے ہیں جیسے کے قاموس العلوم وغیرہ، ان جاری ہونے والے ضمیمہ کو بھی حوالہ جاتی مواد میں شامل کیا جاتا ہے۔
9۔ڈائریکٹریز:
اس سے مراد ایسی کتب ہیں جس میں افراد یا اداروں سے متعلق معلومات درج ہوتی ہیں۔ مثلا افراد کے نام، تعلیم، پیشہ، پتہ، اداروں کے متعلق مکمل تفصیل درج ہوتی ہیں۔
10۔کارٹو گرافک میڑیل:
اس سے مراد ایسی کتب ہیں جن میں جغرافیائی معلومات ہوتی ہیں۔ ان کو جغرافیائی ماخذ بھی کہتے ہیں۔
11۔اٹلس:
اٹلس سے مراد ایسی کتب جس میں مختلف نقشہ جات کو یکجا کر کے کتابی صورت میں شائع کیا جاتا ہے۔
12۔نقشہ جات:
نقشہ جات سے مراد ایسا علمی مواد جس میں کسی شہر، صوبے، ملک یا پوری کائنات کو نقشہ ہوتا ہے۔ یہ کتب کا اہم حوالہ جاتی مواد تصور ہوتا ہے۔ اسکی اہمیت موجودہ دور میں گوگل میپ سے لے سکتے ہیں۔
13۔نقشہ جات:
نقشہ جات سے مراد ایسا علمی مواد جس میں کسی شہر، صوبے، ملک یا پوری کائنات کو نقشہ ہوتا ہے۔ یہ کتب کا اہم حوالہ جاتی مواد تصور ہوتا ہے۔ اسکی اہمیت موجودہ دور میں گوگل میپ سے لے سکتے ہیں۔
14۔جغرافیائی لغت:
جغرافیائی لغت میں مقامات، علاقوں اور ممالک کیمتعلق معلومات درج ہوتی ہیں۔
15۔گلوب:
گلوب ایک گیند نما گول شکل کا ہوتا ہے جس میں پوری دنیا کے نقشے کو ظاہر کیا جاتا ہے یہ عمومی طور پر ہر ادارے میں موجود ہوتا ہے۔
16۔سفری گائیڈ بکس:
یہ ایسی کتب ہوتی ہیں جس میں کسی علاقے، ملک، شہر، کے متعلق معلومات درج ہوتی ہے اگر کسی نے کہیں سفر کرنا ہو تو اس کی مدد لی جاتی ہے۔
17۔سوانحی ماخذ:
مشہور، ناموں اور قابل ذکر شخصیات جن میں مفکرین، مصنفین، سائنسدان، سیاست دان، تاریخ دان، اور دیگر شعبوں سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیت کی زندگی اور کارناموں پر مشتمل کتاب سوانحی ماخذ کہلاتی ہے۔
18۔سمعی و بصری مواد:
غیر کتابی مواد جس میں اخبارات، رسائل، ٹیپ ریکارڈر، ریڈیو، ٹیلی ویژن، فلمیں، سی ڈی، ڈی وی ڈی، یو ایس بی، میموری کارڈ، گوگل ڈرائیو، جن میں اہم لیکچر، تقاریرکو محفوظ رکھ کر حوالہ جاتی مواد میں شامل ہوتے ہیں۔
19۔دستی کتب:
دستی کتب سے مراد ایسی کتب جن میں کسی ایک موضوع کے متعلق اہم ٹرمز اور اصطلاحات ہوتی ہیں۔
20۔مینوئل:
کسی بھی اہم کتاب کے ساتھ اس کا ایک مینوئل بھی شائع ہوتا ہے جس میں ضروری ہدایات، اور استعمال کرنے کا طریقہ درج ہوتا۔
21۔ٹائم ٹیبل:
نظام الاوقات کی ایک شائع شدہ فہرست جو نقل و حمل یا دیگر تقریبات کے لیے اوقات فراہم کرتی ہے۔
22۔تھیسورس:
مترادفات اور بعض اوقات الفاظ کے متضاد الفاظ تلاش کرنے کے لیے ایک اہم حوالہ جاتی کتب کا کام کرتی ہے۔
23۔موضوعاتی کیٹلاگ:
ایک اشاریہ جو ابتدائی نوٹوں کے حوالہ کے ذریعے موسیقی کی ترکیبوں کی شناخت کے لیے استعمال ہوتا ہے۔
24۔ریڈی ریکونر:
ایک چھپی ہوئی کتاب یا جدول جس میں پہلے سے کیلکولیشن کی گئی اقدار ہوں۔
25۔فقروں کی کتاب:
تیار شدہ فقروں کا مجموعہ، جو منظم طریقے سے ترتیب دیا جاتا ہے، عام طور پر ایک غیر ملکی زبان کے لیے ترجمہ کے ساتھ شائع ہوتی ہے جسے حوالہ جاتی کتب میں شمار کیا جاتا ہے۔
26۔فہرست:
آئٹمز کے سیٹ کی شائع شدہ گنتی والی فہرست
27۔گلوسری:
علم کے ایک مخصوص ڈومین میں اصطلاحات کی ایک ایسی فہرست جس کو حروف تہجی کی ساتھ ترتیب دیا گیا ہو۔
28۔گزٹئیر:
ایک جغرافیائی لغت یا ڈائریکٹری جو نقشے یا اٹلس تک منظم رسائی فراہم کرنے کے لیے استعمال ہوتی ہے۔
29۔ڈائجسٹ:
کسی خاص موضوع پر معلومات کا خلاصہ
Concordance30۔
کسی کتاب یا کام کے باڈی میں استعمال ہونے والے پرنسپل الفاظ کی حروف تہجی کی فہرست
31۔کمپنڈیم:
علم کے جسم سے متعلق معلومات کا ایک جامع مجموعہ
Chronicle/Cronology32۔
واقعات کا ایک تاریخی اکاؤنٹ جو تاریخ کے مطابق ترتیب دیا گیا ہے۔
33۔اینالز:
مختصر تاریخی ریکارڈ جس میں واقعات کو تاریخ کے مطابق ترتیب دیا جاتا ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published.

error: Content is protected !!